49

جموںوکشمیر پولیس میں800 سب انسپکٹروں کی بھرتی کو لیفٹنٹ گورنر منوج سنہانےمنظوری دیدی

سری نگر:۸۱،جون:کے این ایس :جموں وکشمیر کے لیفٹنٹ گورنر منوج سنہا نے پولیس،جیل خانہ جات اورفائراینڈ ایمرجنسی سروسزمیں نان گیزٹیڈ اسامیوں کی بھرتی سے متعلق تاریخی اصلاحات عمل میں لاتے ہوئے جموں وکشمیر پولیس میں 800سب انسپکٹروں کی بھرتی عمل میںلانے کومنظوری دی ۔انہوں نے ایک اوراہم اقدام کے بطورجموں وکشمیرپولیس کی ایگزیکٹو اورآرمڈ ونگ میں براہ راست بھرتی ہونے والے سب انسپکٹروں کی سینیارٹی عمل میں لانے کیلئے مشترکہ امتحان کوبھی منظور ی دی ۔کشمیرنیوز سروس(کے این ایس )کے مطابق محکمہ اطلاعات وعوامی تعلقات کی جانب سے جاری تفصیلات میں بتایاگیاکہ لیفٹنٹ گورنر منوج سنہا نے کورونا سے پیداشدہ صورتحال کے باعث بھرتی عمل میں آئی سست رفتاری کودورکرتے ہوئے جموں وکشمیر پولیس میں 800سب انسپکٹروں کی بھرتی عمل میںلانے کومنظوری دی ۔بھرتی کے عمل میں تاریخی اصلاحات عمل میں لاتے ہوئے ایل جی منوج سنہا نے پولیس،جیل خانہ جات اورفائراینڈ ایمرجنسی سروسزمحکمہ جات میں نان گیزٹیڈ اسامیوں کی بھرتی سروس سیلکشن بورڈکے ذریعے عمل میں لانے کوبھی منظوری دی ۔تینوں محکموں یعنی پولیس ،جیل خانہ جات اورفائراینڈ ایمرجنسی سروسزمیں اسامیوں کاانتخاب تحریر ی امتحان اورجسمانی ٹیسٹ پرمبنی ہوگا،اوراس سلسلے میں اُمیدواروں کاجسمانی ٹیسٹ لینے کیلئے ایس ایس بی کی جانب سے حکومت کیساتھ مشاورت کے بعد کمیٹی تشکیل دی جائیگی،اوراس سلسلے میں اُمیدواروں کوجسمانی ٹیسٹ کیلئے بلائے جانے کاطریقہ کار وہی ہوگا جوریاستوں اورمرکزی زیرانتظام علاقوں میں رائج ہے۔جسمانی ٹیسٹ کے اس عمل میں شفافیت کویقینی بنانے کیلئے اس سارے عمل کی ویڈیو گرافی کی جائیگی ۔مزید یہ کہ جموں وکشمیرپولیس کی ایگزیکٹو اورآرمڈ ونگ میں براہ راست بھرتی ہونے والے سب انسپکٹروں کی سینیارٹی عمل میں لانے کیلئے مشترکہ امتحان کوبھی منظور ی دی گئی ہے۔ پولیس افسران کے پیشہ ورانہ ترقی کو یقینی بنانے کے لئے برقرار رکھا جائے گا۔خاص بات یہ ہے کہ لیفٹنٹ گورنر نے بھرتیوں کے عمل میں اصلاحات کااعلان اُس اعلان کے دوروزبعدکیاہے ،جس میں کہاگیاہے کہ پبلک سیکٹر اورسرکاری محکموں میں 25ہزار نوجوانوں کی بھرتی عمل میں لائی جائیگی۔۔ انہوں نے مشاہدہ کیا کہ سروسز سلیکشن بورڈ (ایس ایس بی) کے ذریعہ مختلف محکموں میں بھرتیوں کےلئے لگ بھگ18ہزار اسامیوں کی تشہیر کی گئی ہے اور مزید اسامیوں کی بتدریج شناخت کی جارہی ہے۔خطے کی مجموعی ترقی میں نوجوانوں کے جموں و کشمیر کے کلیدی کردار کا خاکہ پیش کرتے ہوئے ، لیفٹیننٹ گورنر نے زور دے کر کہا کہ جموں و کشمیر کی حکومت بیک ٹو ولیج پروگرام کے اگلے مرحلے کے تحت50ہزارنوجوانوں تک مالی مدد کے لئے پہنچانے کا منصوبہ بنا رہی ہے ، جس کی تفصیلات کو جلد ہی حتمی شکل دی جائے گی۔ انہوں نے بتایا کہ ، آج تک ، جموں و کشمیر بینک نے350 کروڑ روپے سے زیادہ کی ترقی کی ہے جس میں انہوں نےبینک میں یونین ٹریٹری کے 19ہزار600نوجوانوں کومالی معاونت فراہم کرکے اپنے لئے ذرائع معاش پیداکرنے کا موقع فراہم کیا ،اوراب یہ سارے نوجوان مالی طورپر بااختیار بن گئے ہیں ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں