134

مشیر فاروق خان نے عید الاضحی کے سلسلے میں اِنتظامات کا جائزہ لیا

سرینگر/13؍ جولائی :لیفٹیننٹ گورنر کے مشیر فاروق خان نے عیدالاضحی کی آمد کے سلسلے میں کئے جارہے اِنتظامات کا جائز ہ لیا۔ میٹنگ میں صوبائی کمشنر کشمیر ، آئی جی پی کشمیر ، ضلع ترقیاتی کمشنر سری نگر ، کمشنر ایس ایم سی ، ایف سی ایس ایند سی اے کے ڈائریکٹر ان ،اینمل ہسبنڈری، صحت ، لیگل میٹرولوجی اور وقف بورڈ کے نمائندوں نے شرکت کی۔مشیر فاروق خان نے صوبائی اور ضلعی اِنتظامیہ پر زور دیا کہ وہ تمام علاقوںبالخصوص شہر کے اندرونی علاقوں کی مکمل صفائی کے اِنتظامات کریں۔اُنہوں نے اَفسران سے کہا کہ وہ دِن میں کئی بار اُن مقامات کی صفائی کرائیں جہاں قربانی کے جانور فروخت ہوتے ہیں ۔ اُنہوں نے اُن سے مزید کہا کہ جموںوکشمیر میں آنے والے بھیڑ بکریوں اور پولٹری کو پہلے چیک کیا جانا چاہیئے۔مشیرموصوف نے اَفسران سے کہا کہ وہ ذخیرہ اندوزوں اور زائد قیمت وصول کرنے والے دوکانداروں بالخصوص گوشت ، بیکری اور پولٹری بیچنے والوں پر سختی سے پیش آئیں۔ اُنہوں نے مزید کہاکہ ایسے اَفراد کے خلاف ضابطے کے تحت قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے۔اُنہوں نے کہا کہ باقاعدہ بنیادوں پر متواتر معائینہ کرنے کے لئے سول اور پولیس اِنتظامیہ پر مشتمل ٹیمیں تشکیل دی جائیں تاکہ ان تمام مذموم سرگرمیوں کو مکمل تدارک کیا جاسکے۔مشیرموصوف نے کہا کہ لوگوں کو اَپنی شکایات کے اِندراج کے لئے آگے آنا چاہئے۔ اُنہوں نے اَفسران پر زور دے کر کہاکہ تمام علاقوں کی معیاری اور قابل اعتماد بجلی اور پانی کی فراہمی کو یقینی بنائیں تاکہ لوگوں کو کسی قسم کی مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے۔مشیرفاروق خان کو جانکاری دی گئی کہ قیمتوں کو اعتدال پر رکھنے کے لئے مارکیٹ چیکنگ سکارڈ تشکیل دئیے گئے ہیں ۔ صوبائی اِنتظامیہ نے ہرضلع مجسٹریٹ کو بھی ہدایت دی ہے کہ وہ کام کی نگرانی کریں اور جہاں ضروری ہواِصلاحی اِقدامات اُٹھائیں ۔ انہیں مزید بتایا گیا کہ وادی میں داخل ہونے والے تمام مویشیوں کی جانچ پڑتال لور منڈا چوکی پر کی جاتی ہے۔میٹنگ کو مزید بتایا گیا کہ بجلی اور پانی کی باقاعدہ فراہمی کو یقینی بنانے کے علاوہ تمام مقامات کی صفائی کے خصوصی انتظامات بھی طے کئے گئے ہیں۔میٹنگ کو مزید بتایا گیاکووِڈ وَبائی مرض کے پیش نظر لوگوں سے کہا جاتا ہے کہ وہ تمام اَحتیاطی تدابیر اختیار کریں اور کووِڈ مناسب طرز عمل ( سی اے بی )کی پیروی کریں تاکہ جموںوکشمیر کے لوگوں کی فلاح و بہبود کے لئے وائرس کے پھیلاؤ کے امکانات کو کم کیا جاسکے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں