کشمیرکی تجارتی انجمنوں نے فیصلے کاخیرمقدم کیا

0
76

سرینگر19،ستمبر کے این ایس ایک سال سے زیادہ وقفے سے بڑے پیمانے پرمتاثر ہونے والے جموں و کشمیر کے تجارتی سیکٹر کے لئے سرکار نے ابتدائی طور1350 کروڑ روپے کے مالی پیکیج کا اعلان کیا ہے ۔اس دوران سرکاری فیصلے پر جموں و کشمیر کے متعدد تجارتی انجمنوں نے خوشی کا اظہار کرتے ہوئے ایل جی اور تشکیل دی گئی کمیٹی کا شکریہ ادا کیا ہے ۔کشمیرنیوز سروس ( کے این ایس ) کے مطابق جموںلیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا کی جانب سے سنیچر کو جموں کشمیر کے بیمار اقتصادی سیکٹر میں نئی روح پھونکنے کیلئے 1350کروڑ روپے کے خصوصی پیکیج کا اعلان کرتے ہوئے کہا”یہ تو آغاز ہے مزید بہت کچھ آنا باقی ہے‘۔اس دوران جموں و کشمیر کے تجارتی انجمنوں نے فیصلے کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا ہے منوج سنہا نے جو بتایا وہ آج یہاں ایک ماہ کے اندر ہی کر کے دیکھایا ہے ۔جموں و کشمیر ہوٹیلیرس ایسو سی ایشن کے صدر مشتاق احمدچایا نے بتایا کہ جو ایل جی نے کہا ہے وہ انہوں نے کر کے دیکھایا ۔انہوں نے بتایا ہم ”وہ بھی ان سے ملے تھے جس دوران انہوں نے اس بات کی یقین دہانی کی تھی کہ وہ بہت جلد ایک مالی پیکیج کا اعلان کرنے والے ہیں جو سنیچر کو اکیا ہے ،جس کے لئے ہم ان کے شکر گزار ہیں ۔مشتاق احمد چایا نے بتایا ابھی منوج سنہا کو یہاں صرف ایک ماہ ہوا ہے جس دوران انہوں نے جس بات کا یقین دیا وہ حقیقت میں کر کے دکھایا ۔ہوٹلیرس ایسو سی ایشن کا کہنا تھاکشمیر کے سیاحت کو جائزہ لینے کے ضرورت ہے انہوں نے بتایا اگر ہمیں اپنا ٹوزم بحال ہوتا ہے، تو ہم ان چیزوں کے محتاج نہیں تھے ۔ایسو سی ایشن کے صدر نے بتایا کہ ایل جی نے از خود بتایا کہ یہ شروعات ہیں انہوں نے کہا کہ یہاں ایک سال سے ہر ایک شعبہ بری طرح سے متاثرہ ہوا ہے جن کی طرف بھی توجہ کی ضرورت ہے ۔ادھر کشمیرچیمبرس آف کامرس اینڈانڈسٹریز( کے سی سی آئی )کے صدر شیخ عاشق نے بتایا کہ یہ ایک قابل تعریف قدم ہے ۔انہوں نے بتایایہ شروعات ہیں۔ انہوں نے کہا تجارت نے جموں و کشمیرمیں گزشتہ14ماہ سے سخت مشکلات کا سامنا کیاہے ۔شیخ عاشق کا کہنا تھا کہ انکی ایسو سی ایشن حال ہی میں ایل جی سے ملاقی ہوئے تھے ،جس دوران انہوں نے ان سے یہ مطالبہ رکھا تھا ،کہ ایک کمیٹی تشکیل دی جائے جو نتیجہ خیز ہو۔جس کی یہاں بڑی ضرورت تھی ۔صدر کا کہنا تھا کہ لوگوں کے مطالبات زیادہ ہوں گے جو بھی باقی مسائل باقی رہ گئے ہوں گے ان کو بھی سرکار کی نوٹس میں لایا جائے ۔کے سی سی سی آئی صدر نے بتایاکچھ مسائل مرکزی حکومت کے تحت آتے ہیں جن کو بھی آگے لیا جائے گا ۔انہوں نے کہا ہم ایل جی منوج سنہا کے ساتھ ساتھ ریوائیول کمیٹی جس میںاے کے شرما اوراورن مہتا کے ایل جی کے کوششوں کی سراہنا کرتے ہیں جنہوں نے پیکیج کے اعلان کو ممکن بنا دیا ہے ۔ادھر کشمیر ٹریڈرس اینڈ مینی فیکچرس ایسو سی ایشن اور کشمیر ایکونامک ائیلائنس کے صدر محمد یاسین خان نے کشمیر نیوز سروس کے نامہ نگار کے ساتھ فون پر بات کرتے ہوئے کہا کہ شروعات اچھی ہوئی ہے جیسا کہ ایل جل نے کہا ہے اسے آگے اسے اچھا ہے ہم بھی اسی امید پر بیٹھے ہیں۔انہوں نے کہا تھا کہ منوج سنہا نے وعدہ دیا تھاملاقات کے دوران کہ ایک ہفتے کے اندر اندر وہ ایک پیکیج کا اعلان کرنے والے ہیں،جو آج کرکے وعدے کو پورا کیا ہے۔یاسین خان نے بتایا اس پیکیج کے لئے ایل جی کا شکریہ ادا کرتے ہیں۔ خان نے کہا کہ انہوں نے ان کے ساتھ یاتشکیل دی گئی کمیٹی کے ممبران کے ساتھ ملاقات کی تھی جس میں’ ہم نے انہیںبتایا کہ 15ہزار کرروڑ روپے کا نقصان ہوا ہے جس کی برپائی مرکز سے ہونی چاہے ہیں کیوںکہ ریاستی سرکار کے پاس اتنے وسائل موجود نہیں ہے ۔کے ٹی ایم ایف صدر نے بتایا اور بھی بہت سارے مسائل جن میں انڈسٹریز ،ٹرانسپورٹ ،عام لوگ،تاجر وغیرہ کو بہت ساری پریشانیاں ہیں انکو کو بھی حل کرنے کے ضرورت ہے۔انہوں نے کہا شروعارت اچھے ہیں ہم امید کرتے ہیں کہ آگے اسے بڑا کچھ ہوگا جس کی وجہ سے تمام لوگ راحت لیں گے ۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here